ٹینس اسٹار ایوانووچ

ٹینس اسٹار ایوانووچ کا ریٹائرمنٹ کا فیصلہ

پیرس،(یو این آئی): دنیا کی سابق نمبر ایک ٹینس کھلاڑی اینا ایوانووچ نے جسمانی طور پر فٹ نہ ہونے کی وجہ سے اپنے 13 سال کے طویل کیریئر پر بریک لگاتے ہوئے بین الاقوامی ٹینس سے ریٹائرمنٹ کا فیصلہ کیا ہے۔
29 سالہ اسپین کی ایوانووچ سال 2008 میں 12 ہفتے کیلئے ٹینس رینکنگ میں چوٹی پر رہی تھیں۔ اسی سال انہوں نے اپنا پہلا گرینڈ سلیم فرنچ اوپن بھی جیتا تھا۔ ایوانووچ نے 13 سال کے طویل کیریئر کے اختتام کا اعلان کرتے ہوئے کہا “میں نے پیشہ ورانہ ٹینس سے ریٹائرمنٹ کا فیصلہ کیاہے۔ میرے لئے یہ بہت مشکل فیصلہ تھا لیکن ساتھ ہی جشن منانے کے میرے پاس کئی وجوہات ہیں۔
“سابق نمبر ایک ٹینس اسٹار نے کہا “میں دنیا کی نمبر ایک کھلاڑی بنی اور 2008 میں رولاں گیروں جیتا۔میں نے اس کی کبھی توقع نہیں کی تھی۔میں نے 15 ڈبلیوٹی اے کے سنگلز خطاب جیتے اور تین گرینڈ سلیم فائنلس اور فیڈ کپ کے فائنل تک بھی پہنچیں لیکن پیشہ ورانہ زندگی میں کامیابی حاصل کرنے کے لیے جسمانی طور پر فٹ ہونے کی بھی ضرورت ہوتی ہے اور سب جانتے ہیں کہ میرا کیریئر انجری سے متاثر رہا ہے۔
” ایوانووچ نے کہا “میں صرف تبھی کھیل سکتی ہوں جب میں بالکل فٹ رہوں لیکن مجھے فی الحال نہیں لگتا کہ میں ایسا کر سکتی ہوں۔ ایسے میں میں اب زندگی میں آگے بڑھنا چاہتی ہوں۔ “ستمبر میں ایوانووچ یو ایس اوپن کے پہلے راؤنڈ میں ہی ہار کر باہر ہو گئی تھیں اور اس کے بعد وہ ٹاپ 50 کھلاڑیوں سے بھی باہر ہو گئیں۔
اس سے پہلے سربیائی کھلاڑی نے بتایا تھا کہ ڈاکٹروں کی صلاح کے مطابق وہ 2017 تک ٹینس نہیں کھیل سکیں گی کیونکہ ان کی کلائی میں چوٹ ہے اور انگوٹھے میں بھی سرجری کی ضرورت ہے لیکن فٹنس کے مسائل کو دیکھتے ہوئے انہوں نے اب ٹینس کو خیرباد کہہ دیا ہے۔
ڈبلیوٹی اے کے صدرا سٹیو سائمن نے ایوانووچ کو ٹینس کا سفیر بتاتے ہوئے کہا کہ وہ ایک بہترین خاتون کھلاڑی تھیں۔انہوں نے کہاکہ ایوانووچ نے کھیل کے لئے اپنے ملک سربیا اور پوری دنیا میں کافی اہم کردار ادا کیا ہے۔
ہمیں یقیناً ان کی کمی محسوس ہوگی۔وہ ڈبلیوٹی اے کی ایک لیجنڈکھلاڑی رہی ہیں۔”

Share this:

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *